Search
Close this search box.

فہرست موضوعات

عرض ناشر
دیباچہ
باب اول: قادیانی مسئلہ
ختم نبوت کی نئی تفسیر:
مرزا غلام احمد قادیانی کا دعویٰ نبوت:
قادیانی ایک علیحدہ اُمت :
قادیانیوں کا مذہب مسلمانوں سے جدا ہے :
نئے مذہب کے نتائج :
قادیانیوں کو علیحدہ اُمت قرار دینے کامطالبہ :
ذمہ داران حکومت کا رویہ :
مسلمانوں میں شغل تکفیر:
مسلمانوں میں دوسرے فرقے:
قادیانیوں کے سیاسی عزائم:
پاکستان میں قادیانی ریاست :
قادیانیوں کو اقلیت قرار دینے کا مطالبہ :
قادیانیوں کی تبلیغ کی حقیقت :
انگریزی حکومت کی وفاداری :
قادیانیت کے بنیادی خدوخال :
مسلمانوں کا مطالبہ :
قادیانیوں کو اقلیت قرار دینے کے لیے علما کی متفقہ تجویز
علما کے نام
باب دوم: مقدمہ
دیباچہ
جماعت اسلامی کی مخالفت
دیانت داری کاتقاضا :
مخالفین کی بے بسی :
مولانامودودی ؒ کا اصل جرم :
مقدمہ کا پس منظر:
سزائے موت :
ایک عجیب منطق :
رہائی کامطالبہ بھی جرم؟
ہمارے صحافی اوران کاضمیر:
اے پی پی کا افترا:
فرد جرم نمبر۱
بیان نمبر۱: مولانا سید ابوالاعلیٰ مودودی
مولانا سیدابوالاعلیٰ مودودی کے دو اخباری بیانات
فرم جرم نمبر۲
بیان نمبر۲ :مولاناسیدابوالاعلیٰ مودودی
مضمون : سزائے موت کے خلاف رحم کی اپیل کی گنجائش
چنداہم نکات
باب سوم
پہلابیان
وہ حالات جولاہور میں مارشل لا جاری کرنے کے موجب ہوئے
اصل مسئلہ اوراس کاپس منظر:
معاشرتی پہلو:
معاشی پہلو:
سیاسی پہلو:
تلخی پیداہونے کے مزیدوجوہ:
لازمی نتیجہ:
قادیانیوں کی اشتعال انگیزی:
مکروہ تقلید :
جماعتیں مسئلے پیدانہیں کرسکتیں:
شتابہ:
جماعت اسلامی کی مساعی:
بے تدبیری کاقدرتی ردعمل:
عام ناراضگی کے اسباب:
ایں گنا ہیست کہ درشہر شمانیز کنند:
ذمہ داری تمام تر بارڈر پولیس کے ظلم وستم پر ہے :
اصلاح حال کی کوشش :
مسلم عوام سر پھرے نہیں ہیں :
مارشل لا :
(۲) اضطراب کو روکنے اور بعد میں ان سے عہدہ برآہونے کے لیے سول حکام کی تدابیر کا کافی یا ناکافی ہونا :
(۳) اضطرابات کی ذمہ داری :
قادیانی مسئلہ کے متعلق میرااور جماعت اسلامی کاطرزعمل
’’رواداری‘‘کانرالاتصور:
غلطی کوغلطی نہ کہو:
عدالت سے درخواست:
اہم حقائق وواقعات
جماعت اسلامی کی دستاویزی شہادت:
قادیانیوں کومشورہ:
احسان شناسی:
دوسرابیان
قادیانیوں سے متعلق مطالبات بیک وقت سیاسی بھی ہیں اورمذہبی بھی:
مسلمانوں اورقادیانیوں کے اختلافات بنیادی ہیں:
تمام منحرفین کواقلیت قراردینے کامطالبہ ضروری نہیں:
ظفراللہ خان کی علیحدگی کے مطالبے کے وجوہ:
کلیدی مناصب کامفہوم اورمطالبہ علیحدگی کے لیے دلائل:
عدالت کے سامنے پیش کردہ قادیانیوں کی بناوٹی پوزیشن:
قادیانیوں کی جارحانہ روش محض اتفاقی نہیں ہے:
کفر‘تکفیراورخروج ازاسلام :
گواہوں کاکٹہراعلمی بحث کے لیے موزوں نہیں:
دستوریہ میں قائداعظمؒ کی افتتاحی تقریرکاصحیح مدعا:
کیاقائداعظمؒ کی تقریردستوریہ کوپابندکرسکتی ہے:
اسلامی ریاست نہ تھیاکریسی ہے اورنہ مغربی طرزکی جمہوریت:
اسلام میں قانون سازی:
اسلامی ریاست کے مطالبے کے حق میں معقول وجوہ موجودہیں:
اسلامی ریاست میں ذمیوں کی حیثیت:
مرتدکی سزااسلام میں:
اسلامی قانون جنگ اورغلامی:
اسلام اورفنون لطیفہ:
فقہی اختلافات اسلامی ریاست کے قیام میں حائل نہیں:
جماعت اسلامی اورڈائریکٹ ایکشن:
۳۰/جنوری کی تقریرمیں فسادات کی دھمکی نہیں بلکہ تنبیہہ تھی:
ڈائریکٹ ایکشن کارائج الوقت تصوراورمفہوم:
ڈائریکٹ ایکشن قطعی حرام نہیں:
راست اقدام کے لیے شرائط مکمل نہ تھیں:
حکومت کی تنگ ظرفی سے جوابی تشددکاخطرہ تھا:
ڈائریکٹ ایکشن کی علانیہ مخالفت نہ کرنے کی وجہ:
تیسرابیان (جومورخہ ۱۳/فروری ۱۹۵۴ء کوتحریری شکل میں عدالت مذکور میں پیش کیاگیا۔)
بجواب نکتہ اول :(الف) درباب نزول مسیح علیہ السلام

قادیانی مسئلہ

اس ویب سائٹ پر آپ کو خوش آمدید کہتے ہیں۔ اب آپ مولانا سید ابوالاعلیٰ مودودی رحمتہ اللہ علیہ کی کتابوں کو ’’پی ڈی ایف ‘‘ کے ساتھ ساتھ ’’یونی کوڈ ورژن‘‘ میں بھی پڑھ سکتے ہیں۔کتابوں کی دستیابی کے حوالے سے ہم ’’اسلامک پبلی کیشنز(پرائیوٹ) لمیٹڈ، لاہور‘‘، کے شکر گزار ہیں کہ اُنھوں نے اس کارِ خیر تک رسائی دی۔ اس صفحے پر آپ متعلقہ کتاب PDF اور Unicode میں ملاحظہ کیجیے۔

دوسراموقف:

۶۔’’اوریہی عیسیٰ ہے جس کاانتظارتھا‘اورالہامی عبارتوںمیںمریم اورعیسیٰ سے میںہی مرادہوں۔میری نسبت ہی کہاگیاکہ ہم اس کونشان بنادیںگے اورنیزکہاگیاکہ یہ وہی عیسیٰ ابن مریم ہے جوآنے والاتھاجس میںلوگ شک کرتے ہیںیہی حق ہے اورآنے والایہی ہے اورشک محض نافہمی سے ہے۔‘‘ (کشتی نوح‘مرزاغلام احمدصاحب‘ص ۴۸)
۷۔’’اس نے براہین احمدیہ کے تیسرے حصے میںمیرانام مریم رکھا‘ پھر جیسا براہین احمدیہ سے ظاہرہے‘دوبرس تک صفت مریمیت میں،میںنے پرورش پائی اور پردہ میں نشوونما پاتا رہاپھر……مریم کی طرح عیسیٰ کی روح مجھ میںنفخ کی گئی اوراستعارے کے رنگ میںمجھے حاملہ ٹھہرایاگیا‘اورآخرکئی مہینے کے بعد‘جودس مہینے سے زیادہ نہیں‘بذریعہ اس الہام کے جوسب سے آخربراہین احمدیہ کے حصہ چہارم میںدرج ہے‘مجھے مریم سے عیسیٰ بنایاگیا۔پس اس طورسے میںابن مریم ٹھہرااورخدانے براہین احمدیہ کے وقت میںاس سر خفی کی مجھے خبرنہ دی۔‘‘ (کشتی نوح‘ص۴۶)
۸۔’’سویقیناًسمجھوکہ نازل ہونے والاابن مریم یہی ہے جس نے عیسیٰ ابن مریم کی طرح اپنے زمانے میںکسی ایسے شخص والدروحانی کونہ پایاجواس کی روحانی پیدائش کا موجب ٹھہرتا۔تب خداتعالیٰ خوداس کامتولی ہوااورتربیت کی کنارمیںلیااوراپنے بندے کانام ابن مریم رکھا…پس مثالی صورت کے طورپریہی عیسیٰ ابن مریم ہے جوبغیرباپ کے پیداہوا۔کیاتم ثابت کرسکتے ہوکہ اس کاکوئی والدروحانی ہے؟کیاتم ثبوت دے سکتے ہوکہ تمہارے سلاسل اربع میںسے کسی سلسلے میںیہ داخل ہے؟پھریہ ابن مریم نہیںتوکون ہے؟‘‘
(ازالہ اوہام مرزاغلام احمدصاحب، ص ۶۵۹)
۹۔’’اب یہ بھی جانناچاہیے کہ دمشق کالفظ جو’’مسلم‘‘کی حدیث میںواردہے‘یعنی صحیح مسلم میںیہ جولکھاہے کہ حضرت مسیح دمشق کے منارہ سفیدمشرقی کے پاس اتریںگے۔یہ لفظ ابتدا سے محقق لوگوںکوحیران کرتاچلاآیاہے۔({ FR 6479 }) واضح ہوکہ دمشق کے لفظ کی تعبیر میں میرے پرمنجانب اللہ یہ ظاہرکیاگیاہے کہ اس جگہ ایسے قصبے کانام دمشق رکھاگیاہے جس میں ایسے لوگ رہتے ہیںجویزیدی الطبع اوریزیدپلیدکی عادات اورخیالات کے پیروہیں … خدا تعالیٰ نے مجھ پریہ ظاہرفرمادیاہے کہ یہ قصبہ قادیان بوجہ اس کے کہ اکثریزیدی الطبع لوگ اس میںسکونت رکھتے ہیں،دمشق سے ایک مناسبت اورمشابہت رکھتاہے۔‘‘
(حاشیہ ازالہ اوہام‘صفحہ ۶۳تا۷۳)
۱۰۔’’مجھے اس خداکی قسم جس نے مجھے بھیجاہے اورجس پرافترا کرنا لعنتیوں کا کام ہے کہ اس نے مسیح موعودبناکرمجھے بھیجاہے۔‘‘ (ایک غلطی کاازالہ ‘تبلیغ رسالت جلد۱۰‘ص۱۸)

شیئر کریں